لندن سے انوکھی خبر : تین جج صاحبان کو ایک ہی جنسی اسکینڈل لے ڈوبا ، تفصیلات آپ کو ناقابلِ یینا لگیں گی – Tareekhi Waqiat Official Urdu Website
You are here
Home > انٹر نیشنل > لندن سے انوکھی خبر : تین جج صاحبان کو ایک ہی جنسی اسکینڈل لے ڈوبا ، تفصیلات آپ کو ناقابلِ یینا لگیں گی

لندن سے انوکھی خبر : تین جج صاحبان کو ایک ہی جنسی اسکینڈل لے ڈوبا ، تفصیلات آپ کو ناقابلِ یینا لگیں گی

لندن (ویب ڈیسک )دنیا کے سب سے اہم اور متعبرانعام ’نوبل‘ دینے والی کمیٹی میں بھی خواتین کو جنسی طور پر ہراساں کرنے اور انہیں ’ریپ‘ کا نشانہ بنانے کا انکشاف ہوا ہے۔ بااثر ترین شخص کے خلاف کارروائی نہ ہونے کے بعد احتجاجا نوبل کمیٹی کے 3 ججز نے اپنے عہدوں سے استعفیٰ دے دیا۔

نوبل کمیٹی کے جن ججز یا رکن نے اپنے عہدوں سے استعفیٰ دیا ہے، ان کا تعلق ادب کمیٹی سے ہے، جب کہ جس رکن کے خلاف خواتین کو جنسی طور پر ہراساں کرنے اور ’ریپ‘ کا نشانہ بنانے کا الزام سامنے آیا ہے، اس کا تعلق بھی اسی کمیٹی سے ہی ہے۔واضح رہے کہ نوبل انعام کا بانی الفریڈ نوبل تھا۔ الفریڈ سویڈن میں پیدا ہوا لیکن اس نے اپنی زندگی کا بیشتر حصہ روس میں گزارا۔ ڈائنامائٹ الفریڈ نوبل ہی نے ایجاد کیا۔ اس کے علاوہ متعدد دوسری ایجادات کا سہرا بھی اسی کے سر ہے۔ اپنی زمینوں اور ڈائنامائٹ سے کمائی گئی دولت کے باعث 1896ء میں اپنے انتقال کے وقت نوبل کے اکاؤنٹ میں 90 لاکھ ڈالر کی رقم تھی۔اس کی دولت کی رقم 31 ملین سویڈیش کراؤن تھی جو امریکی ڈالر 220ملین کے برابر ہے۔ اسے ابتدائی پانچ انعامات کے لیے مختص کر دیا گیا۔ نوبل پرائز کی بنیاد جب پہلی بار 1901ء میں پڑی تو یہ انعام 4ء1ملین نے ایک چیک‘ ایک طلائی میڈل اور ایک ڈپلوما کے عطایا پر مشتمل تھا۔[1] موت سے قبل اس نے اپنی وصیت میں لکھ دیا تھا کہ اس کی یہ دولت ہر سال ایسے افراد یا اداروں کو انعام کے طور پر دی جائے جنہوں نے گزشتہ سال کے
دورانمیں طبیعیات، کیمیا، طب، ادب اور امن کے میدانوں میں کوئی کارنامہ انجام دیا ہو۔پس اس وصیت کے تحت فوراً ایک فنڈ قائم کر دیا گیا جس سے حاصل ہونے والا منافع نوبل انعام کے حق داروں میں تقسیم کیا جانے لگا۔ 1968ء سے نوبل انعام کے شعبوںمیں معاشیات کا بھی اضافہ کر دیا گیا ہے۔ نوبل فنڈ کے بورڈ کے 6 ڈائریکٹر ہیں جو دو سال کے لیے منتخب کیے جاتے ہیں اور ان کا تعلق سویڈن یا ناروے کے علاوہ کسی اور ملک سے نہیں ہو سکتا۔نوبل فنڈ میں ہر سال منافع میں اضافے کے ساتھ ساتھ انعام کی رقم بھی بڑھ رہی ہے۔ 1948ء میں انعام یافتگان کو فی کس 32 ہزار ڈالر ملے تھے، جب کہ 1997ء میں یہی رقم بڑھ کر 10 لاکھ ڈالر تک پہنچ گئی۔نوبل انعام کی پہلی تقریب الفریڈ کی پانچویں برسی کے دن یعنی 10 دسمبر 1901ء کو منعقد ہوئی تھی۔ تب سے یہ تقریب ہر سال اسی تاریخ کو ہوتی ہے۔


Top