حج کے ایام میں شوہر کی نماز کے دوران کھڑی یہ خاتون کیا کام کر رہی ہے ؟ حقیقت سامنے آتے ہی پوری دنیا میں کھلبلی مچ گئی – Tareekhi Waqiat Official Urdu Website
You are here
Home > اسپیشل سٹوریز > حج کے ایام میں شوہر کی نماز کے دوران کھڑی یہ خاتون کیا کام کر رہی ہے ؟ حقیقت سامنے آتے ہی پوری دنیا میں کھلبلی مچ گئی

حج کے ایام میں شوہر کی نماز کے دوران کھڑی یہ خاتون کیا کام کر رہی ہے ؟ حقیقت سامنے آتے ہی پوری دنیا میں کھلبلی مچ گئی

مکہ مکرمہ(مانیٹرنگ ڈیسک)حرم مکی شریف میںنمازپڑھتے ہوئے شوہر کو سایہ کرنے والی خاتون کی تصویر نے سوشل میڈیا پر وائرل ہونے کے بعد دھوم مچادی ۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق شوہر کو سایہ کرنے والی خاتون کی تصویر کھینچنے والے فوٹوگرافررائد اللحیانی کا کہنا ہے کہ حج ایام کے دوران جب

حاجی منی سے مکہ نہیں آئے تھے اس وقت میں نے حرم مکی شریف میں یہ منظر دیکھا تھا کہ ایک خاتون اپنے شوہر کو اپنے جسم سے سایہ کر رہی ہے جبکہ اس کا شوہر نماز میں مصروف ہے۔وہ قیام کرتا تو اسے سایہ کرتی، وہ رکوع میں جاتا تو اپنی پوزیشن اس انداز سے بدلتی کہ سایہ اس پر رہے اور جب وہ سجدے میں جاتا تب بھی اپنا رخ بدل کر اس پر سایہ کرتی ۔ یہ منظر میں نے کیمرے کی آنکھ سے محفوظ کرلیا۔سوشل میڈیا پر شیئر کرتے ہی ہزاروں لوگوں نے اسے پسند کیا، شعرانے اس پر شعر کہے، ادبانے اس پر نثر لکھا اور قدیم عرب شعراکے منتخب کلام تصویر پر چسپاں کردیئے گئے۔ دیکھتے دیکھتے تصویر ٹرینڈ بن گئی۔ جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق مکہ (اے پی پی) سعودی عرب کی حکومت نے حج کے ایام میں بھگدڑ کے واقعات سے نمٹنے اور نظم و ضبط کیلئے 14 ہزار سکیورٹی اہلکاروں کو مسجد الحرام اور ملحقہ علاقوں میں تعینات کر دیا۔ سعودی عرب کے اخبار کے مطابق کراﺅڈ مینجمنٹ کے ڈائریکٹر کرنل میشال آل الدوانی نے بتایا کہ مسجد الحرام، میدان عرفات، منٰی اور دیگر مقامات پر عازمین حج کی آمد و رفت کو سہل اور آسان بنانے کیلئے ان اہلکاروں کی تعیناتی عمل میں لائی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان اہلکاروں کو ہجوم پر قابو پانے کے حوالہ سے خصوصی تربیت دی گئی ہے۔ یہ اہلکار راستوں میں سامان رکھنے والے عازمین یا مسجد الحرام اور دیگر پرہجوم مقامات پر سونے والے افراد کی رہنمائی کریں گے اور انہیں ایسا کرنے سے روکیں گے۔ انہوں نے کہا کہ مخصوص مقامات پر ہجوم زیادہ ہونے کی وجہ سے متبادل راستوں کا بھی انتظام کر دیا گیا ہے اور یہ اہلکار ایسے حالات میں عازمین کی رہنمائی کریں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ 10 ذی الحجہ کو جمرات میں کنکریاں مارنے کے موقع پر پل پر عازمین کی زیادہ سے زیادہ تعداد ایک لاکھ سے تجاوز نہیں کرنے دی جائے گی۔


Top