آل پارٹی کانفرنس میں میری یہ بات نہیں مانی گئی ۔۔۔۔۔شیخ رشید نے سیاسی پینترہ بدلتے ہوئے اے پی سی اعلامیے پر ہی سوالات اٹھا دیے – Tareekhi Waqiat Official Urdu Website
You are here
Home > پا کستا ن > آل پارٹی کانفرنس میں میری یہ بات نہیں مانی گئی ۔۔۔۔۔شیخ رشید نے سیاسی پینترہ بدلتے ہوئے اے پی سی اعلامیے پر ہی سوالات اٹھا دیے

آل پارٹی کانفرنس میں میری یہ بات نہیں مانی گئی ۔۔۔۔۔شیخ رشید نے سیاسی پینترہ بدلتے ہوئے اے پی سی اعلامیے پر ہی سوالات اٹھا دیے

آل پارٹی کانفرنس میں میری یہ بات نہیں مانی گئی ۔۔۔۔۔شیخ رشید نے سیاسی پینترہ بدلتے ہوئے اے پی سی اعلامیے پر ہی سوالات اٹھا دیے
لاہور (ویب ڈیسک) شیخ رشید کا کہنا ہے کہ اے پی سی کا اعلامیہ جتنا مضبوط ہونا چاہیے تھا، اتنا مضبوط نہیں، اے پی سی میں کہا کہ پہلااستعفیٰ دینے کو تیار ہوں، چاہتا تھا کہ نوازشریف کے خلاف ہم فوری باہر نکلیں۔ عوامی مسلم لیگ کے سربراہ نے ان خیالات کا اظہار نجی پروگرام کے پروگرام ’سوال یہ ہے‘ میں گفتگو کرتے ہوئے کیا۔
ٹاپ نیوز:‌بریکنگ نیوز: پیر حمید الدین سے حکومتی وفد کی ملاقات ، کیا معاملات طے ہوئے؟ ناقابل یقین تفصیلات منظر عام پر آ گئیں
ان کا کہنا تھا کہ 10 سے 15 فروری تک تحریک شروع ہوجائے گی، یقین ہے فروری تک حکومت چلی جائے گی، نوازشریف کمپنی کو گھر بھیجنے کے لئے آصف زرداری سے بھی میٹنگ کرسکتا ہوں۔ انھوں نے یقین ظاہر کیا کہ طاہرالقادری اب کینیڈا نہیں جائیں گے۔شیخ رشید کا کہنا تھا کہ حکومت کو گھر بھیجنے کے لیے باہر نکلنا ہوگا، قوم جاتی امراء کا گھیراؤ کرلے، پی پی سے امید ہے،عمران خان ساتھ ہیں اور دیگرجماعتیں بھی ساتھ ہوں گی۔شیخ رشید نے کہا کہ ختم نبوت سے متعلق حلف نامے میں تبدیلی میں نوازشریف ملوث ہیں، انھیں مشکل میں دیکھ رہا ہوں، اطلاعات ہیں کہ بعض شہزادوں نے بھی نوازشریف کا نام لیا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ نوازشریف کبھی نہیں چاہیں گے کہ شہبازشریف چوہدری بن جائیں، شہبازشریف کے لیے بھی حدیبیہ کیس میں بچنے کا کوئی چانس نہیں۔ سپریم کورٹ میں حدیبیہ کیس اب میں لے کرجاؤں گا۔ان کا کہنا تھا کہ ایم کیوایم پاکستان نے کسی کا نام نکالنے سے متعلق نہیں کہا، البتہ فاروق ستارکا ایک لائن کامسئلہ ہمیشہ ہوتا ہے ۔
جبکہ دوسری جانب سربراہ پاکستان عوامی تحریک ڈاکٹر طاہر القادری نے کہا ہے کہ ایوانِ وزیراعظم اور جاتی امرا اداروں کے خلاف سازشوں کے مراکز ہیں۔وہ ویڈیو لنک کے ذریعے لاہور میں تنظیم کے مرکزی دفتر کے ذمہ داروں سے گفتگو کر رہے تھے، انہوں نے کہا کہ معاشی اور نظریاتی دہشت گردی کا راستہ روکنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگرلٹیروں اور قاتلوں کو کھلا چھوڑا گیا تو پاکستان کا وجود خطرے میں پڑجائے گا کیوں کہ جہاں انصاف نہیں ہوتا وہاں معاشرے تباہ ہوجاتے ہیں اس لیے ماڈل ٹاؤن کے شہداء کو انصاف نہیں ملا تو بڑی تباہی آئے گی۔سربراہ پی ٹی اے نے کہا کہ نا اہل شخص اور اس کے حواری اداروں کے خلاف اکٹھے ہوگئے ہیں اور مسلسل معزز اداروں کے خلاف ہرزہ سرائی کر رہے ہیں اور عوام کو اکسا رہے ہیں۔طاہر القادری نے کہا کہ خواتین کی شمولیت کے بغیرترقی کا کوئی ہدف حاصل نہیں ہوسکتا اور ہمیں فخر ہے کہ قوم کی مائیں بہنیں اور بیٹیاں شہدائے ماڈل ٹاؤن کے ساتھ کھڑی ہیں۔علامہ طاہرالقادری نے کہا کہ قاتل حکمرانوں کی سوچ آج بھی بدنیتی پرمبنی ہے اور ماڈل ٹاؤن کی شہداء کے لواحقین انصاف کے منتظر ہیں انہیں انصاف دیا فراہم کیا جائے۔


Top