پاکستان کے اہم ترین شہر میں نامور سیاسی رہنما پر قاتلانہ حملہ۔۔۔ہسپتال سے افسوسناک اطلاعات موصول – Tareekhi Waqiat Official Urdu Website
You are here
Home > پا کستا ن > پاکستان کے اہم ترین شہر میں نامور سیاسی رہنما پر قاتلانہ حملہ۔۔۔ہسپتال سے افسوسناک اطلاعات موصول

پاکستان کے اہم ترین شہر میں نامور سیاسی رہنما پر قاتلانہ حملہ۔۔۔ہسپتال سے افسوسناک اطلاعات موصول

حیدرآباد (ویب ڈیسک) ہٹڑی تھانے کی حدود میں بھینس کالونی کے قریب موٹرسائیکل سوار مسلح افراد کی فائرنگ سے فنکشنل لیگ رہنما اور کول مائنز کے مالک آغا صدر الدین موسی خیل زخمی ہوگئے ‘آغا صدر الدین کو طبی امداد کے لئے سول اسپتال لایاگیا ‘زخمی کان مالک کے بھائی کاکہناہے

کہ کول مائنز کے تنازعہ پر مخالفین نے فائرنگ کی ہے۔ فصیلات کے مطابق فنکشنل لیگ رہنما اور لاکھڑا میں واقع کوئلہ کی ایک کان کے مالک آغا صدرالدین موسی خیل کول مائنز پر قبضہ اورتنازعہ کے حوالے سے پریس کانفرنس کرنے کے لئے گھرواقع حیدرآباد سٹی سے حیدرآبادپریس کلب جانے کے لئے نکلے تھے ‘بھینس کالونی کے قریب موٹرسائیکل سوار 2نقاب پوش ملزمان نے اچانک سامنے آکر فائرنگ شروع کردی ‘آغا صدرالدین کی کار پر 5/6گولیاں لگیں جبکہ ایک گولی ان کی ٹانگ میں لگی جس کے نتیجے میں وہ زخمی ہوگئے ۔زخمی آغا صدر الدین کو طبی امداد کے لئے سول اسپتال لایاگیا۔آغا صدر الدین کے بھائی آغا نعمت اللہ نے میڈیا کو بتایا کہ اس کے بھائی پر فائرنگ ان کی کان پر قبضہ کی کوشش کرنے والے مخالفین نے کی ہے جس کی سرپرستی بااثرسیاسی لوگ کررہے ہیں۔دوسری جانب عبدالقدوس بزنجو نے اقرار کیا کہ انہیں وزیراعلیٰ بلوچستان کے انتخابات لڑنے کے دوران جان سے مار ڈالنے کی دھمکی دی گئیں لیکن وہ نامساعد حالات میں بھی کام کرتے رہے۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی جانب سے چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کے خلاف متنازعہ بیان بلوچستان کے عوام کی توہین

ناقابل یقین خصوصیات کا حامل سمارٹ فون اوپو ایف 7پاکستان کی مارکیٹ میں کب متعارف کروایا جا رہا ہے ؟ خبر آ گئی

ہے۔انہوں نے کہا کہ ’میری سمجھ سے بالا تر ہے کہ یہ کون فیصلہ کرے گا کہ نواز شریف اور حاصل بزنجو کو ووٹ ملے تو ٹھیک ہے لیکن اگر صادق سنجرانی اکثریت ووٹوں کے ساتھ سینیٹ چیئرمین منتخب ہوجائیں تو یہ غلط ہے‘۔انہوں نے کہا کہ ’ایک غلط روایت جنم لے چکی ہے کہ جب ایک عام شخص مجرم قرار پاتا ہے تو کوئی آواز بلند نہیں ہوتی اور نااہل وزیراعظم نواز شریف کے کیس میں سوال اٹھائے گئے کہ مجھے گھر کیوں بھیجا گیا‘۔وزیراعلیٰ بلوچستان کا کہنا تھا کہ ان کی حکومت صوبے میں خوف اور نفرت کو مٹا کر امن اور ترقی کی ترویج کے لیے کام کرنا چاہتی ہے۔انہوں نے بلوچستان سمیت دیگر صوبوں میں امن کی بحالی کے لیے سیکیورٹی فورسز کے کردار کو مستحسن قرار دیا اور ساتھ ہی پیپلز پارٹی کی جانب سے نیشنل فنانس کمیشن ایوارڈ، 18 ویں ترمیم اور بلوچستان کو ترقیاتی بجٹ دینے پرخراج تحسین پیش کیا۔
اپنے والدین اور بھائی کے قتل کے الزام میں جوانی کے 20 سال جیل میں گزار دینے والی اسماء نواب سے پورے خاندان نے لا تعلقی اختیار کر رکھی تھی مگر ایک شخص باقاعدگی کے ساتھ انکی ملاقات کے لیے آتا رہا ؟ یہ شخص کون تھا ؟ ستم رسیدہ خاتون کے آنکھیں نم کر دینے والے انکشافات


Top