عمران خان پاکستان ہی نہیں امریکہ کی بھی ضرورت بن گئے، وزیر اعظم پاکستان اور ڈونلڈ ٹرمپ کے درمیان ملاقات کب اور کہاں ہونے جا رہی ہے؟ ایک خبر نے ساری دنیا کو ہلا کر رکھ دیا – Tareekhi Waqiat Official Urdu Website
You are here
Home > پا کستا ن > عمران خان پاکستان ہی نہیں امریکہ کی بھی ضرورت بن گئے، وزیر اعظم پاکستان اور ڈونلڈ ٹرمپ کے درمیان ملاقات کب اور کہاں ہونے جا رہی ہے؟ ایک خبر نے ساری دنیا کو ہلا کر رکھ دیا

عمران خان پاکستان ہی نہیں امریکہ کی بھی ضرورت بن گئے، وزیر اعظم پاکستان اور ڈونلڈ ٹرمپ کے درمیان ملاقات کب اور کہاں ہونے جا رہی ہے؟ ایک خبر نے ساری دنیا کو ہلا کر رکھ دیا

واشنگٹن (انیوز ڈیسک) امریکی ماہرین کا کہنا ہے کہ امریکہ وزیراعظم پاکستان عمران خان اور امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی ملاقات کروانے پر مجبور ہو گیا ہے جس کی وجہ یہ ہے کہ امریکہ سپر پاور ہونے کے باوجود چاہ کر بھی افغانستان میں پاکستان کی مدد کے بغیر کچھ نہیں کرسکتا۔ اس حوالے سے

قومی اخبار میں شائع ایک رپورٹ میں بتایا گیا کہ امریکی ماہرین نے وائٹ ہاؤس کی جانب سے وزیراعظم عمران خان کے دورہ امریکہ کے انتظامات کو حتمی شکل دینے کی رپورٹ کی تصدیق کر دی ہے۔امریکی ماہرین کا کہنا ہے کہ دنیا کی سپر پاور ریاست امریکہ پاکستان کی مدد کے بغیر افغانستان سے نہیں نکل سکتا۔ یہی وہ راز ہے جس نے امریکی ملٹری اسٹیبلشمنٹ کو امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور وزیراعظم پاکستان عمران خان کی ساتھ وائٹ ہاؤس میں ملاقات کروانے کا مجبور کیا۔اس حوالے سے پروفیسر جاش اے سینڈر نے کہا کہ ویت نام کے بعد افغانستان ایسا خطہ ہے جس نے امریکہ کو دن میں تارے دکھا دئیے ہیں۔پاکستان اس خطے کا ایک کلیدی کردار ہے اور دنیا کی کوئی بھی طاقت اس نیوکلئیر پاور کے حامل ملک کو نظرانداز نہیں کر سکتی۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم پاکستان عمران خان کو دعوت دینا امریکہ کی مجبوری بن چکا ہے ۔ جبکہ پروفیسر اجے کمار شرما نے بھی اس بات کی تائید کرتے ہوئے کہا کہ حالات کی نزاکت کا احساس کرتے ہوئے یہ فیصلہ کر لیا گیا ہے کہ پاکستان کو اگر امریکہ نے افغانستان میں اہم کردار نہ سونپا تو حالات بدتر ہی رہیں گے اور اب تو صدر ڈونلڈ ٹرمپ بھی عمران خان کے ساتھ ملاقات کرنے کے لیے بےچین نظر آتے ہیں۔ڈونلڈ ٹرمپ اور عمران خان کی ملاقات سے متعلق بات کرتے ہوئے پروفیسر مائیکل اے رائٹ نے کہا کہ بھارت کی جانب سے پاکستان پر ائیرسٹرائیک کے بعد پاک فضائیہ نے جس طرح بھارتی مگ طیاروں کو مار گرایا اور بھارتی فضائیہ کا ایک پائلٹ بھی زندہ پکڑا، اس غیر معمولی اقدام نے امریکی انتظامیہ کو بھی اپنی پالیسی میں لچک پیدا کرنے پر مجبور کر دیا ہے۔ڈاکٹر امرجیت سنگھ کا کہنا تھا کہ اس خطے میں جیو پولیٹکس بڑی تیزی کے ساتھ بدل رہی ہے، امریکہ کی بیوقوفیوں کی وجہ سے روس اپنا اثرورسوخ بڑھانے میں کامیاب ہوا۔ امریکہ نے افغانستان، عراق، شام اور لیبیا میں جس طرح فوجی چڑھائی کی اس نے امریکہ کو ہر معاملے میں نقصان پہنچایا ۔ ان کا کہنا تھا کہ آج اس خطے میں روس، پاکستان، چین اور ایران قریب تر ہو گئے ہیں۔پینٹاگون اور سینٹکام اب اس نہج پر پہنچے چکے ہیں کہ پاکستان کے بغیر وہ کامیاب نہیں ہو سکتے ۔ اور اسی سب کے پیش نظر اب وزیراعظم پاکستان عمران خان امریکہ کی مجبوری بنتے جا رہے ہیں۔ کیونکہ اب دنیا جان چکی ہے کہ امریکہ اور بھارت کی پالیسیاں بالکل ناکام ہو رہی ہیں اور پاکستان کو اہم کردار دینے کے سوا اب کوئی چارہ بھی نہیں رہا ۔


Top