ایک اور انقلابی دریافت ۔۔۔ دنگ کر ڈالنے والی خصوصیات کی حامل موبائل بیٹری بھی بنا لی گئی – Tareekhi Waqiat Official Urdu Website
You are here
Home > دلچسپ و عجیب وا قعات > ایک اور انقلابی دریافت ۔۔۔ دنگ کر ڈالنے والی خصوصیات کی حامل موبائل بیٹری بھی بنا لی گئی

ایک اور انقلابی دریافت ۔۔۔ دنگ کر ڈالنے والی خصوصیات کی حامل موبائل بیٹری بھی بنا لی گئی

ایک اور انقلابی دریافت ۔۔۔ دنگ کر ڈالنے والی خصوصیات کی حامل موبائل بیٹری بھی بنا لی گئی

لاہور (ویب ڈیسک) امریکی ٹیکساس یونیورسٹی کی انجنیئرنگ ٹیم نے ایک نئے بیٹری سیل کا ابتدائی نمونہ (پروٹوٹائپ )تیار کیا ہے جو کہ نہ صرف پھٹنے اورآگ پکڑنے سے محفوظ ہے بلکہیہ آج کی مروجہ لیتھیم آئن بیٹریوں کی نسبت سستی اور دیر پا بھی ہو گی۔

خاص بات یہ ہے کہ یہ نئی بیٹری سالڈ سٹیٹ ٹیکنالوجی کے ذریعے تیار کی گئی ہے۔جبکہ لیتھیم آئن بیڑیاں مائع الیکٹرو لائیٹ سے تیار کی جاتی ہیں۔ مذکورہ بیٹری ٹیکساس یونیورسٹی کے 94 سالہ پروفیسر جوہن گاڈوِن کی زیر نگرانی تیار کی گئی ہے۔بتاتے چلیں کہ یہی صاحب مقبول ترین لیتھیم آئن بیٹری کے شریک موجد بھی ہیں۔جو کہ آج کل نا صرف موبائل ولیپ ٹاپ بلکہ برقی گاڑیوں تک میں استعمال ہو رہی ہیں۔ مگر کثرت استعمال سے خاص حالا ت میں یہ آگ پکڑ سکتی ہیں۔ لیتھیم بیٹری کی اسی خامی کی وجہ سے ہی بیٹریوںکے پھٹنے اور آگ پکڑنے کے کئی واقعات رونما ہوچکے ہیں،جس وجہ سے ایک کمپنی کو کروڑوں ڈالرکا نقصان اٹھانا پڑھا تھا۔بات یہیں تک محدود نہیں بلکہ پچھلے دنوںایک مہنگے ترین آئی فون کے پھٹنے کی وڈیوز بھی سامنے آ چکی ہے۔ اگرچہ دورانِ تیاری ان موبائلز میں بیٹری کو محفوظ رکھنے کیلئے بہت سی حفاظتی تدابیر اختیار کی جاتی ہیں لیکن ماہرین کے مطابق ان تمام تر حفاظتی اقدامات کے باوجود بھی لیتھیم آئن بیٹری میں آگ پکڑنے یا پھٹنے کاکچھ نہ کچھ امکان ضرور موجود رہتا ہے۔ لیتھیم بیٹریوں میں مسلسل چارجنگ اور استعمال ہونے (Discharging) کے دوران لیتھیم آئن پر ایک خاص تہہ بنتی رہتی ہے جو بیٹری کو نقصان پہنچاتی ہے جس وجہ سے شارٹ سرکٹ اور بیٹری میں آگ لگنے کا خطرہ ہمیشہ رہتا ہے۔

اسکے علاوہ لیتھیم ان عناصر میں شامل ہے جن کی دستیابی اگلے 100 سال بعد زمین پر انتہائی ناپید ہو چکی ہو گی۔یہی وجہ ہے کہ بہت سے ادارے مروجہ لیتھیم آئن بیٹری ٹیکنالوجی کو پختہ کرنے کے ساتھ ساتھ متبادل ٹیکنالوجی پر بھی کام کر رہے ہیں۔اسی تناظر میں ماہرین اس نئی سالڈ اسٹیٹ بیٹری کو ایک اہم پیش رفت قراردے رہے ہیں۔ بیٹری کی موجد کے مطابق سالڈ اسٹیٹ اس میں چارج ذخیرہ کرنے کی صلاحیت لیتھیم آئن بیڑی سے تین گناہ زیادہ ہو گی۔ جس وجہ سے مستقبل میں مزید پتلے اور زیادہ دیرپا بیٹری لائف والے موبائل تیار کیے جا سکیں گے۔اس کے علاوہ الیکٹرک گاڑیاں بھی انکی بدولت ایک مکمل چارجنگ کے بعد زیادہ فاصلہ طے کر سکیں گی۔عام استعمال بیٹریوں میں مائع لیتھیم آئن استعمال کیا جاتا ہے جو کہ مثبت اور منفی بروقیروں کے درمیان برقی آئن کی ترسیل کرتا ہے۔اس کے برعکس سالڈ اسٹیٹ بیٹری میں گلاس الیکٹرو لائٹ استعمال کیے گئے ہیں جس وجہ سے ان میں لیتھیم کے علاوہ پوٹاشیم اورکیلشیم وغیرہ کو مثبت برقیرے کے طور پر استعمال کیا جا سکے گا۔کیونکہ باقی الکی گروپ کی دھاتیں لیتھیم کی نسبت سستی ہیں اس لئے یہ بیٹریاں کم قیمت بھی ہو ں گی۔ آج موبائل ، لیپ ٹاپ اور الیکٹرک کاروں کی بڑھتی ہوئی مانگ کی وجہ سے بیٹریوں کی مانگ بھی اپنے عروج پر ہے۔اسی لئے بہت سے ادارے ماضی میں بھی کئی دعوے کرتے رہے ہیں مگر کوئی متبادل پروڈکٹ متعارف نہیں کرا سکے۔


Top