غیر مسلم قصائی سے گوشت خریدنا جائز یا نا جائز ؟ ممتازعالم دین کا بیان سامنے آ گیا – Tareekhi Waqiat Official Urdu Website
You are here
Home > اسلامی واقعات > غیر مسلم قصائی سے گوشت خریدنا جائز یا نا جائز ؟ ممتازعالم دین کا بیان سامنے آ گیا

غیر مسلم قصائی سے گوشت خریدنا جائز یا نا جائز ؟ ممتازعالم دین کا بیان سامنے آ گیا

لاہور(ویب ڈ یسک ) کسی یورپی ملک میں جاکر حلال جانور کا گوشت کی خریداری بھی اس لئے مسئلہ بن جاتا ہے کہ اسے کسی غیر مسلم نے ذ بح کیا ہوتا ہے۔ لیکن اب تو پاکستان میں بھی یہ مسئلہ عام ہورہا ہے۔غیر مسلم خاص طور عیسائی جانور ذبح کرکے ان کا گوشت

فروخت کرتے ہیں اوربہت سے مسلمان اسکوجائز نہیں سمجھتے۔ اگرچہ کوئی غیر مسلم قصائی یہ دعویٰ بھی کرے کہ وہ گوشت اور مرغی حلال فروخت کرتا ہے لیکن سوال پیدا ہوتا ہے کہ کیا غیر مسلم قصائی سے گوشت خریدنا جائز ہے؟ اس حوالہ سےآن لائن اخبار میں جاری ہونے والےایک ممتاز مفتی حافظ محمد اشتیاق الازہری کے”فتویٰ آن لائن ”میں کہا گیاہے کہ مسلمانوں کے علاوہ اہل کتاب کا ذبیحہ حلال ہے۔ لیکن اس بات کی تسلی کر لینی چاہیے اور تحقیق بھی کر لینی چاہیے کہ کیا اہل کتاب اللہ کے نام پر ذبح کر رہا ہے یا حضرت عیسی علیہ السلام کے نام پر، اگر اہل کتاب اللہ کے نام پر ذبح کر رہے ہوں تو جائز وحلال ہے ورنہ حرام ہے، اس بات کی بھی( ریسرچ ) تحقیق کر لینی چاہیے کہ جو جانور وہ ذبح کر رہے ہیں وہ ہماری شریعت میں بھی حلال ہو ورنہ حرام جانور کا گوشت بھی حرام ہی ہوتا ہے اگرچہ اس کو اللہ کے نام پر ذبح کیا گیا ہو۔تاہم اہل کتاب کے علاوہ کسی بھی غیر مسلم کے ہاتھ کا ذبیحہ جائز وحلال نہیں ہے۔اس فتوی کی بنا پر تمام پاکستانی اہل کتاب ممالک سے حلال جانور کا گوشت کھا سکتے ہیں بشرطیہ کہ فتوی کے تمام پہلووں کو مد نظر رکھا جائے اور تب خریدا جائے۔


Top