دلہن لینے گئے تھے ، پٹ کر واپس آ گئے۔۔۔ شیخوپورہ میں کل ایک دلچسپ مگر افسوسناک واقعہ پیش آ گیا، تفصیلات اس خبر میں – Tareekhi Waqiat Official Urdu Website
You are here
Home > پا کستا ن > دلہن لینے گئے تھے ، پٹ کر واپس آ گئے۔۔۔ شیخوپورہ میں کل ایک دلچسپ مگر افسوسناک واقعہ پیش آ گیا، تفصیلات اس خبر میں

دلہن لینے گئے تھے ، پٹ کر واپس آ گئے۔۔۔ شیخوپورہ میں کل ایک دلچسپ مگر افسوسناک واقعہ پیش آ گیا، تفصیلات اس خبر میں

شیخوپورہ (ویب ڈیسک)تھانہ سٹی مرید کے کے علاقہ شہزاد ٹائون میں بارات تاخیر سے پہنچنے پر دلہن کے گھر والوں سے تلخ کلامی کے بعد شادی والا گھر میدان جنگ بن گیا اور دونوں فریقین نے ایک دوسرے پر گھونسوں، تھپڑوں کی بارش کردی جس کے نتیجہ میں 15 باراتی اور مہمان

زخمی ہوگئے، بارات دلہن کو لیے بغیر ہی واپس چلی گئی، زخمی ہونیوالوں میںدولہا اور باراتی عمر اسلم، رمضان، حمید، سرور اور دلہن کے گھر والوں کی طرف سے شہزاد، ثمینہ بی بی وغیرہ شامل ہیں۔ بتایا گیا شہزاد ٹائون میں محنت کش رمضان کی بیٹی کی بارات لاہور سے دوپہر دوبجے پہنچنا تھی بارات شام 6 بجے پہنچی جس پر دلہن کے گھر والوں نے دولہا شان کے گھر والوں سے احتجاج کیا، بات تلخ کلامی سے بڑھتی لڑائی مارکٹائی تک پہنچ گئی۔ پولیس مصروف تفتیش ہے۔دوسری جانب ایک خبر کے مطابق جنرل ہسپتال شعبہ ایمرجنسی میں مریض کے لواحقین کے تشدد سے 6ملازم زخمی ہو گئے جن میں سے ایک کی حالت تشویشناک بتائی جاتی ہے جبکہ جھگڑے کے دوران بھی شعبہ حادثات میں آنے والے مریضوں کا ڈاکٹروں و نرسنگ سٹاف نے علاج معالجہ جاری رکھا۔ تفصیلات کے مطابق شکیل نامی شخص کو ٹریفک حادثے میں زخمی ہونے کے باعث جنرل ہسپتال کے شعبہ ایمرجنسی میں لایا گیا جس کا ہسپتال میں فوری علاج معالجہ شروع کر دیا گیا۔ اسی دوران مریض کے ایک درجن کے قریب عزیز و اقارب نے وارڈ میں زبردستی داخل ہونے کی کوشش کی تو سکیورٹی گارڈ نے ایک مریض کے پاس ایک تیماردار رہنے کیلئے کہا جس پر وہ طیش میں آ گئے اور انہوں نے سکیورٹی گارڈ کو تشدد کا نشانہ بنانا شروع کر دیا۔ دوسرے ملازمین نے بیچ بچاؤ کی کوشش کی تو انہیں بھی بُری طرح سے زدوکوب کیا گیا جس سے 6 ملازموں ابراہیم، عارف، راشد ،منظور، علی مرتضیٰ و دیگرکو چوٹیں آئیں جبکہ ایک ملازم کے سر پر شدید زخم آئے جبکہ دوسرے کے دانت توڑ دئیے گئے۔ ایم ایس ڈاکٹر محمود صلاح الدین وانتظامی ڈاکٹرز اور پولیس کی بھاری نفری موقع پر پہنچ گئی اور صورتحال پر قابو پایا جبکہ دھینگامشتی کرنے والوںکو موقع پر ہی حراست میں لے لیا گیا۔ پرنسپل پروفیسر غیاث النبی طیب نے اس واقعہ پر افسوس کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہا کہ اس واقعہ کو اعلیٰ حکام کے علم میں لے آئے ہیں‘ ذمہ داران کے خلاف قانونی کارروائی ہو گی۔


Top