ایک شرارتی وصیت۔۔۔برطانوی خاتون نے اپنے مرنے کے بعد شوہر سے ایساکام کرنے کا وعدہ لیا کہ جان کر آپ کو بھی شدید حیرت ہو گی – Tareekhi Waqiat Official Urdu Website
You are here
Home > تاریخی وا قعات > ایک شرارتی وصیت۔۔۔برطانوی خاتون نے اپنے مرنے کے بعد شوہر سے ایساکام کرنے کا وعدہ لیا کہ جان کر آپ کو بھی شدید حیرت ہو گی

ایک شرارتی وصیت۔۔۔برطانوی خاتون نے اپنے مرنے کے بعد شوہر سے ایساکام کرنے کا وعدہ لیا کہ جان کر آپ کو بھی شدید حیرت ہو گی

یوں تو دنیا میں بے شمار وصیتیں لکھی گئیں ۔اکثر لوگوں نے ایسی ناقابل یقین وصیتیں لکھی کہ ان کے رشتہ دار بھی حیران رہ گئے کچھ نامور لوگوں نے اپنی وصیوں میں اپنی جائدااد کا بڑاحصہ غریبوں کے لیے وقف کر دیا اور کچھ نے ایسی خواہشات کا اظہار کر دیا کہ بعد والے بھی جان کر دنگ رہ گئے ۔

برطانوی خاتون نے دنیا سے رخصت ہونے کے بعد بھی شوہر کو ہنسنے پر مجبور کر دیا، ایسی حسین شرارت کر گئی کہ اہل خانہ سمیت جس نے سنا وہ حیران رہ گیا۔ تفصیلات کے مطابق برطانوی بوڑھے میاں بیوی نکول اور نائیجل کی جوڑی رشتہ داروں اور دوستوں کے نزدیک مثالی تھی اور ان میں بے پناہ محبت بھی تھی۔ نائیجل کی اہلیہ نکول کینسر کے باعث دنیا سےرخت ہو گئیں، نکول ایک ہنس مکھ عورت تھی اس نے موت سے قبل اپنے شوہر سے وعدہ لیا تھا کہ وہ اس کے دنیا سے رخصت ہو جانے کے بعد اس کے پودوں کا ہمیشہ خیال رکھیں گے۔ نائیجل نے اپنی آنجہانی اہلیہ کے دنیا سے رخصت ہو جانے کے بعد اس وعدے کو خوب نبھایا۔وہ نکول کے چھوڑے پودوں کو گزشتہ چار سال سے باقاعدگی کیساتھ پانی دیتا رہاپانی دیتا رہا مگر حال ہی میں بوڑھے نائیجل کے سامنے ایک ایسا انکشاف آیا کہ وہ بے اختیار اپنی آنجہانی اہلیہ کی شرارت پر مسکرا اٹھا۔ اس واقعہ سے متعلق نائیجل کی بیٹی انٹونیا نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹویٹرپر بتایا کہ والدہ کی وفات کے بعد اس کے والد اپنے وعدے کے مطابق کسی مذہبی فریضے کی طرح باقاعدگی سے پانی دیتے اور ان کا خیال رکھتے جو کہ چار سال سے ایسا ہی کرتے رہے۔

گزشتہ دنوں انہو ں نے جب گھر سے اولڈ ہائوس منتقل ہونے کا فیصلہ کیا تو اپنے ساتھ اپنی اہلیہ کے خاص پودے بھی ساتھ لے جانے کا فیصلہ کیا تب جا کر پہلی بار انہیں پتہ چلا کہ جن پودوں کو وہ گزشتہ چار سال سے اپنی آنجہانی اہلیہ سے کئے گئے وعدے کے مطابق پانی دے رہے تھے وہ دراصل پلاسٹک کے بنے مصنوعی پودے تھے جن کو وہ اپنی کمزور بصارت کے باعث محسوس نہ کر پائے اور گھر والے کیونکہ ان کے کمرے میں زیادہ آتے جاتے نہیں تھے اس لئے یہ بات چھپی رہی۔انٹونیا کا کہنا تھاکہ حقیقت معلوم ہونے پر میرے والدپہلے تو بہت حیران ہوئے اور پھر اپنی آنجہانی اہلیہ کی شرارت پر مسکرا اٹھے۔ انٹونیا کا کہنا تھا کہ اس موقع پر انہیں محسوس ہوا کہ ان کی آنجہانی والدہ بھی اپنے شوہرکیساتھ شرارت پر مسکرا رہی ہوں۔پودوں کی حقیقت جان لینے کے باوجود بوڑھے نائجل نے انہیں اپنے ساتھ اولڈ ہائوس لے جانے کا فیصلہ کیا البتہ اب وہ انہیں پانی نہیں دیتے۔خیال رہے کہ اس سے قبل بھی ایک افریقی عورت نے ایسی وصیت کی تھی کہ اس کی قبر میں ضرورت زندگی کی ہر چیز رکھی جائے جسے وہ مرنے کے بعد استعمال کر سکے اور جو روزمرہ کی زندگی میں خاصی اہمیت کی ھامل بھی ہو ۔


Top